پی سی بی کی سربراہی کیلئے نجم سیٹھی بہترین امید وار قرار

لاہور: پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے دو سابقہ چیئرمین نے بورڈ کے نئے چیئر مین کی تقرری کے لیے نجم سیٹھی کو بہترین امید وار قرار دے دیا۔
پی سی بی کے نئے چیئرمین کے انتخاب کے لیے رواں ہفتے الیکشن متوقع ہیں، جس کے لیے ایگزیکٹو کمیٹی کے موجودہ چیئرمین نجم سیٹھی نمایاں امید وار ہیں۔
ایک نجی ٹیلی وژن سے بات چیت کرتے ہوئے پی سی بی کے سابق چیئرمین خالد محمود نے پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) کے انعقاد اور بورڈ کے دیگر انتظامی امور کو احسن طریقے سے چلانے پر نجم سیٹھی کی تعریف کی۔
ان کا کہنا تھا کہ’جب پہلی مرتبہ 2013 میں نجم سیٹھی سے میری ملاقات ہوئی تو وہ اس وقت میں ان سے کچھ زیادہ متاثر نہیں ہوا تاہم وقت کے ساتھ ساتھ ان کے لیے میری رائے تبدیل ہوئی‘۔
ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ نجم سیٹھی نے اپنے آپ کو ایک بہترین منتظم کے طور پر منوایا ہے جس کی سب سے بڑی مثال دو مرتبہ پی ایس ایل کا انعقاد شامل ہے۔
پی سی بی کے سابق چیئرمین نے کہا کہ پی ایس ایل نے پاکستان میں نوجوان کھلاڑیوں کے لیے ایک بہترین پلیٹ فارم فراہم کیا اور آئی سی سی چیمپیئنز ٹرافی میں پاکستان کا نیا ٹیلنٹ نظر آیا۔
پی سی بی کے ایک اور سابق چیئرمین جنرل توقیر ضیاء نے بھی خالد محمود کے خیالات کو دہرایا اور نجی ٹیلی وژن پر گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے نجم سیٹھی کو بورڈ کی سربراہی کے لیے بہترین امیدوار قرار دیا۔
ان کا کہنا تھا کہ ’نجم سیٹھی میری نظر میں پی سی بی کے امور چلانے کے لیے ایک بہترین امیدوار ہیں، اگر مجھے چیئرمین کی تقرری کے الکیشن میں نامزد کیا گیا تو میں نجم سیٹھی کے حق میں دستبردار ہو جاؤں گا۔‘
لیفٹیننٹ جنرل ریٹائر توقیر ضیاء نے کہا کہ پی سی بی اور پاکستان کرکٹ کے معاملات میں نجم سیٹھی کی گہری نظر ہے جو دن بدن مزید گہری ہوتی جارہی ہے، نجم سیٹھی کو ایک ایجنڈے کے تحت تنقید کا نشانہ بنایا جاتا رہا لیکن انہیں ان سب چیزوں سے پریشان ہونے کی ضرورت نہیں ہے۔

یہ بھی پڑھیں

انگلینڈ بھی ٹیم پاکستان بھجوانے سے پہلے سکیورٹی ایشوز کا راگ الاپنے لگا

نیوزی لینڈ کے بعد انگلینڈ کرکٹ بورڈ نے بھی پاکستان ٹیم بھجوانے سے پہلے سکیورٹی …