معین علی کی عمدہ باؤلنگ،میچ اور ٹیسٹ سیریز انگلینڈ کے نام

معین علی کی شاندار باؤلنگ کے باعث انگلینڈ نے جنوبی افریقہ کو چوتھے ٹیسٹ میچ میں 177 رنز سے شکست دے کر چار میچوں کی سیریز 1-3 سے اپنے نام کرلی۔
اولڈ ٹریفرڈ میں کھیلا میچ کھیل کے چوتھے روز ہی ختم ہوگیا، جبکہ جوئے روٹ کی قیادت میں یہ پہلی سیریز ہے جو انگلینڈ نے اپنے نام کی۔
جنوبی افریقہ کوآخری ٹیسٹ میں جیت کے لیے 380 رنز کا ہدف ملا لیکن اس کی پوری ٹیم چوتھے روز چائے کے وقفے کے فوری بعد 202 رنز پر ڈھیر ہوگئی۔
جنوبی افریقہ کی آخری دونوں وکٹیں معین علی نے دو گیندوں پر مورنے مورکل اور ڈُوانے اولیور کو آؤٹ کرکے حاصل کیں۔
اس طرح معین علی نے میچ میں 69 رنز کے عوض 5 جبکہ سیریز میں مجموعی طور پر 25 وکٹیں حاصل کیں۔
انگلینڈ کی یہ 1998 کے بعد جنوبی افریقہ کے خلاف ہوم ٹیسٹ سیریز میں پہلی کامیابی ہے۔
چوتھےروز کھانے کے وقفے تک جنوبی افریقہ کے 40 رنز پر 3 کھلاڑی آؤٹ تھے اور ہاشم آملہ اور کپتان فاف ڈوپلیسی کریز پر موجود تھے۔
دونوں کھلاڑیوں نے 123 رنز کی شاندار شراکت قائم کی اور ٹیم کے اسکور کو 163 پر پہنچایا لیکن پھر ہاشم آملہ 83 رنز بنا کر ایل بی ڈبلیو آؤٹ ہوگئے۔
یہ وہ موقع تھا جب جنوبی افریقہ کے ہاتھ سے میچ نکلنا شروع ہوا اور کوئی کھلاڑی زیادہ دیر تک کریز پر نہ رُک پایا۔
جنوبی افریقہ کی پانچویں اور چھٹی وکٹ 173 پر گری جب کوئنٹن ڈی کوک ایک اور تھونِس ڈی برون صفر پر پویلین لوٹے۔
183 کے مجموعی اسکور پر فاف ڈوپلیسی بھی ہمت ہار گئے اور 61 رنز کی اننگز کھیل کر وکٹوں کے پیچھے کیچ آؤٹ ہوئے۔
کگیسو ربادا ایک جبکہ مورنے مورکل اور ڈُوانے اولیور بغیر رن بنائے آؤٹ ہوئے۔
شاندار پرفارمنس پر معین علی مین آف دی میچ اور مین آف دی سیریز کے حقدار قرار پائے۔

یہ بھی پڑھیں

انگلینڈ بھی ٹیم پاکستان بھجوانے سے پہلے سکیورٹی ایشوز کا راگ الاپنے لگا

نیوزی لینڈ کے بعد انگلینڈ کرکٹ بورڈ نے بھی پاکستان ٹیم بھجوانے سے پہلے سکیورٹی …