کیا واٹس ایپ میں صارفین کا ڈیٹا محفوظ ہے ؟


نیویارک(ٹیکنالوجی ڈیسک/ میڈیا92 نیوز)فیس بک کے حوالے سے کیمبرج اینا لیٹیکا ڈیٹا سکینڈل سامنے آنے کے بعد میسجنگ ایپ واٹس ایپ نے واضح کیا ہے کہ اس کے صارفین کے پیغامات اینڈ ٹو اینڈ انکرپشن کے باعث محفوظ ہیں اور وہ کسی قسم کا مواد میسجز سے اکٹھا نہیں کرتی ۔واٹس ایپ دنیا کی مقبول ترین مسچنگ ایپ ہے جس کے ماہانہ صارفین کی تعداد ایک ارب 50 کروڑ سے زائد ہے اور اس حوالے سے خدشات ظاہر کیے جارہے تھے کہ فیس بک کی زیر ملکیت اس اپلیکشن میں بھی صارفین کا ڈیٹا محفوظ نہیں ۔ماہرین کے اس خدشے پر واٹس ایپ کی جانب سے ردعمل ظاہر کرتے ہوئے ایک ترجمان نے نیوز ایجنسی پی ٹی آئی کو بتایا کہ واٹس ایپ نہ ہونے کے برابر ڈیٹا اکٹھا کرتی ہے اور ہر مسیج اینڈ ٹو اینڈ انکر پٹڈ ہے ،میڈیا میں سامنے آنے والی حالیہ رپورٹس کے برعکس ہم صارفین کے اپنے پیاروں کو بھیجے جانے والے پیغامات کو ٹریک نہیں کرتے ۔ترجمان نے مزید کہا کہ رپورٹس کے برعکس ہم صارفین کے اپنے پیاروں کو بھیجے جانے والے پیغامات کو ٹریک نہیں کرتے ۔ترجمان نے مزید کہا کہ واٹس ایپ کیلئے ہمارے صارفین پرائیویسی اور سکیورٹی سب سے زیادہ اہمیت رکھتی ہے ۔واٹس ایپ نے گروپس کے حوالے سے ان رپورٹس پر بھی ردعمل ظاہر کیا جن کے مطابق یہ اتنے زیادہ محفوظ نہیں ۔واٹس ایپ کے ترجمان کے مطابق جب بھی کوئی نیا رکن کسی گروپ کا حصہ بنتا ہے تو تمام اراکین کو نوٹیفکیشن موصول ہوتا ہے ،گروپ ممبر گروپ میں شامل ہر فرد کو دیکھ سکتے ہیں ،اس کے نام اور فون نمبر کو جان سکتے ہیں ،اسی گروپ کو چھوڑنا یا بلاک بنانا بھی ایک کلک سے ممکن ہے ۔خیال رہے کہ واٹس ایپ نے اپنی اپلیکشن میں اپریل 2016 میں اینڈ ٹو انکرپشن کا فیچر متعارف کرایا تھا جبکہ اس نے اگست 2016 میں اپنی پرائیویسی پالیسی کو بھی بدلا تھا ۔اس پالیسی کے تحت اعلان کیا گیا تھا کہ وہ فیس بک ڈیٹا شیئر کرے گی تاہم صارفین اسے چاہے تو ٹرن آف کر سکتے ہیں ۔واٹس ایپ کی جاننے سے فیس بک سے ڈیوائس کی معلومات ،صارف کے اکاﺅٹ کا نمبر تو شیئر کیا جاتا ہے مگر پیغامات کا مواد نہیں ۔

یہ بھی پڑھیں

ایپل کا تھرڈ پارٹی ایپس کے حوالے سے اہم اقدام

کیلیفورنیا: ٹیکنالوجی کمپنی ایپل نے یورپی یونین کی جانب سے جاری کیے جانے والے ڈیجیٹل مارکیٹس …