ملازمت پیشہ خواتین کی جانب سے خلع لینے کا رجحان تیزی سے بڑھنے لگا

لاہور(میڈیا پاکستان) خواتین بالخصوص پڑھی لکھی ملازمت پیشہ خواتین کی جانب سے خلع لینے کا رجحان تیزی سے بڑھ رہا ہے۔ رواں سال لاہور کی فیملی عدالتوں میں6578خلع کے دعوے دائر ہوئے جبکہ فیملی عدالتوں نے2145خواتین کو خلع کی ڈگریاں جاری کردیں۔ قانونی ماہرین کا کہنا ہے طلاق کی شرح میں اضافہ کی بڑی وجہ خاندانی نظام میں فریقین کے درمیان عدم برداشت ہے۔ ماہرین قانون کا یہ بھی کہنا ہے اگر میاں بیوی اپنی ذاتی انا کو چھوڑ دیں تو طلاق سے بچا جاسکتا ہے ۔ قانونی ماہرین نے خلع میں اضافے کے رجحان کو معاشرے کیلئے خطرناک قرار دیتے ہوئے مستقبل میں خاندانی نظام کو بری طرح متاثر کرنے کا پیش خیمہ قرار دیا ہے۔ایک اندازے کے مطابق روزانہ 15سے 20خواتین حصول طلاق کیلئے فیملی عدالتوں میں درخواستیں دائر کرتی ہیں جن میں پڑھی لکھی خواتین کی شرح زیادہ ہے۔

یہ بھی پڑھیں

ماسٹر پلان عامر احمد خان

میڈیا 92 نیوز ڈسک ماسٹر پلان2050ءلاہور ڈویژن کے روشن مستقبل کا تعین کرے گا ۔ …