عدالتی فیصلہ بلڈوز کرنے کا عمل مسترد کرتے ہیں، سراج الحق

اسلام آباد(میڈیا پاکستان)امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کہاہے کہ اکثریت کے بل بوتے پر سپریم کورٹ کے فیصلے کو بلڈوز کرنے کے عمل کو مسترد کرتے ہیں۔سراج الحق نے گزشتہ روز پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بنی اسرائیل کی تباہی کی ایک ہی وجہ تھی کہ وہاں دو طرح کے قانون تھے اس وقت پاکستان میں بھی یہی کچھ ہورہا ہے،امیر کیلیے اور غریب کیلیے اور قانون ہے۔ انھوں نے کہا کہ کل اکثریت کے بل بوتے پر سپریم کورٹ کے فیصلے کو بلڈوز کیا گیا،یہ پاکستان کی تاریخ کا سیاہ ترین باب ہے، ہم اس کے خلاف عدالت اور عوام میں جائیں گے، یہ ہماری جمہوریت پر ایک دھبہ ہے،ن لیگ نے ایک فرد کیلیے اپنے آئین کو بھی تبدیل کیا، جمہوریت کے دامن پر شب خون مارا گیا۔
امیر جماعت اسلامی نے اظہار برہمی کرتے ہوئے کہا کہ قومی اسمبلی کا ممبر نبی اکرم ؐکو آخری نبی ماننے کا حلف اٹھاتا تھا،اس حلف کو ختم کردیا گیا،یہ کس کو خوش کرنے کیلیے کیا گیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ 295C کو ختم کرنا مغربی ایجنڈا ہے، یہ ہمارے دین اور آئین کی خلاف ورزی ہے،یہ مغرب کو خوش کرنے کیلیے کیا گیا۔

یہ بھی پڑھیں

پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان پہلا ٹیسٹ ڈرا ہوگیا

 کراچی: پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان دو میچوں پر مشتمل سیریز کا پہلا ٹیسٹ میچ …