لیکوڈیشن بورڈ میں بوگس بھرتیوں کیخلاف دائر درخواست پر رپورٹ طلب

لاہور(میڈیا پاکستان)لاہور ہائیکورٹ نے لیکوڈیشن بورڈ میں بوگس بھرتیوں اور سرکاری اراضی کی بندر بانٹ کے خلاف دائر درخواست پر تفصیلی رپورٹ طلب کر لی، عدالت نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ بورڈ کے چئیرمین اور سیکرٹری کی ملی بھگت سے سرکاری زمینوں پرغیر قانونی قبضہ برقرار ہے دونوں عہدوں پر رہنے کے قابل نہیں۔لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس علی اکبر قریشی نے کیس کی سماعت کی،،،، درخواست گزار کے وکیل اظہر صدیق ایڈووکیٹ نے عدالت کو بتایا کہ پنجاب لیکوڈیشن بورڈ میں سرکاری اراضی کی بندر بانٹ کر کے سرکاری خزانے کو ناقابل تلافی نقصان پہنچایا گیا،،، انہوں نے کہا کہ بورڈ میں خلاف قانون بوگس بھرتیاں کی گئیں اور من پسند افراد کو نوازا گیا،،،، لیکوڈیشن بورڈ کے وکیل کے مبہم جواب کو عدالت نے مسترد کردیا،،، عدالت نے ریمارکس دیتے ہوئے کہاکہ بورڈ نے آج تک سرکاری اراضی واگزار کرانے کے لئے نوٹس دینے کے علاوہ عملی اقدام نہیں کئے،،،،نہ ہی سرکاری جائیداد کا کرایہ وصول کیا نہ ہی غیر قانونی قابضین کو بے دخل کیا،،،، عدالت نے لیکوڈیشن بورڈ کی جائیدادوں کی تفصیل ،،،بھرتی کئے جانے والے ملازمین کی فہرست عدالت میں پیش کرنے کا حکم دے دیا،،،، عدالت نے کہا کہ چئیرمین اور سیکرٹری اس عہدے پر رہنے قابل نہیں اگر فہرست فراہم نہ کی گئی تو چیف سیکرٹری پنجاب کو آئندہ سماعت پر ذاتی حیثیت میں طلب کیا جائے گا،،، عدالت نے کیس کی مزید سماعت آیک ہفتے تک ملتوی کر دی۔

یہ بھی پڑھیں

پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان پہلا ٹیسٹ ڈرا ہوگیا

 کراچی: پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان دو میچوں پر مشتمل سیریز کا پہلا ٹیسٹ میچ …