این اے 120 کی انتخابی مہم: مریم نواز نے دورہء لندن منسوخ کردیا

لاہور:ایک جانب جہاں پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) نے اپنی والدہ کی انتخابی مہم چلانے والی مریم نواز کی جانب سے وزیراعلیٰ سیکریٹریٹ کے استعمال کے خلاف الیکشن کمیشن آف پاکستان ( ای سی پی) جانے کا ارادہ کر رکھا ہے وہیں نااہل ہونے والے وزیر اعظم کی صاحبزادی نے این اے 120 میں بلاتعطل مہم جاری رکھنے کے لیے اپنے لندن کے دورے کو منسوخ کردیا.
نتخابی مہم کے دوسرے روز (اتوار 27 اگست) بھی مریم نواز نے ماڈل ٹاؤن میں واقع وزیراعلیٰ سیکریٹریٹ میں حکمراں جماعت کے مقامی نمائندگان سے ملاقاتیں کی اور اپنی والدہ کی کامیابی کے لیے دن رات کام کرنے کی درخواست کی.
جب چند کارکنان نے مریم نواز سے یہ سوال کیا کہ وہ مہم میں ان کا ساتھ دینے کے لیے حلقے کا رخ کب کریں گی تو ان کا کہنا تھا کہ ‘میں عید کے بعد پورے حلقے کے دوروں کا آغاز کروں گی، میں 2018 کے الیکشنز تک کارکنان کے درمیان موجود رہوں گی’.
مریم نواز نے بتایا کہ اپنی والدہ کلثوم نواز کی انتخابی مہم کو جاری رکھنے کے لیے وہ بیمار والدہ سے ملنے لندن بھی نہیں جائیں گی.
واضح رہے کہ نواز شریف کے صاحبزادے حسن اور حسین جبکہ دوسری بیٹی عاصمہ لندن میں والدہ کے ساتھ ہی موجود ہیں جہاں ان کے گلے کے کینسر کا علاج جاری ہے.
ذرائع پاکستان مسلم لیگ (نواز) کے مطابق ‘ایسا لگتا ہے کہ این اے 120 کے ضمنی انتخاب کی مہم کے لیے شریف خاندان پارٹی کے کسی رکن پر بھروسہ کرنے کے لیے راضی نہیں اور یہ ہی وجہ ہے کہ مریم نواز اپنی والدہ کو دیکھنے کے لیے لندن نہیں جارہیں’.
ذرائع کا کہنا تھا کہ ‘کیونکہ مریم نواز سیاست میں کافی فعال اور پرجوش ہیں اس لیے وہ مہم اپنے خاندان کے علاوہ کسی اور کے حوالے کرنے کا چانس نہیں لے سکتیں’.

یہ بھی پڑھیں

پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان پہلا ٹیسٹ ڈرا ہوگیا

 کراچی: پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان دو میچوں پر مشتمل سیریز کا پہلا ٹیسٹ میچ …