ناقص اشیا خوردو نوش فروخت کرنے والے مافیا کی ناکامی ،ڈی جی فوڈ اتھارٹی پنجاب ہی رہیں گے

لاہور(میڈیا پاکستان) ڈی جی فوڈ اتھارٹی کا تبادلہ صوبہ بلوچستان میں کرنے کا معاملہ جبکہ سیکرٹری خوراک نے نورالامین مینگل کی خدمات پنجاب میں ہی رکھنے کی سفارش کردی۔ تفصیلات کے مطابق اسٹیبلشمنٹ ڈویژن نے گزشتہ ہفتے ڈی جی فوڈ اتھارٹی کو بلوچستان ٹرانسفر کرنے کے احکامات جاری کئے تھے جس کے بعد سیکرٹری خوراک کی جانب سے چیف سیکرٹری کو ایک مراسلہ بھیجا گیا جس کے مطابق ڈی جی پنجاب فوڈ اتھارٹی کی سروسز پنجاب میں ہی رکھنے کی سفارش کی گئی ہے۔ مراسلہ میںکہا گیا ہے صحت عامہ کے مفاد میںپنجاب فوڈ اتھارٹی کے ڈی جی کی حیثیت سے نورالامین مینگل کی کاوشیں انتہائی اہم ہیں۔ ڈی جی کے تبادلے سے پنجاب فوڈ اتھارٹی کے جاری اور مستقبل میں ترتیب دئیے گئے منصوبوں کو نقصان پہنچ سکتا ہے لہٰذاپنجاب حکومت نور الامین مینگل کا تبادلہ روکنے کیلئے اسٹیبلشمنٹ ڈویژن سے بات کرے۔ دوسری جانب ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ گھی، تیل، آٹا ،کاربونٹیڈ ڈرنکس اور دیگر ناقص اشیاء خورونوش فروخت کرنے والے مافیا کیخلاف کارروائیاں کرنے کے باعث ڈی جی فوڈ اتھارٹی کے تبادلے کیلئے پریسر بڑھایاجارہاہے۔ اس حوالے سے ڈی جی فوڈ اتھارٹی نے اپنے موقف میں کہا کہ انہیں تبادلے پر کوئی اعتراض نہیںہے۔ انکا مقصد ملاوٹ مافیا کیخلاف جدوجہدکرنا ہے جو وہ کہیں بھی رہ کر جاری رکھیں گے۔

یہ بھی پڑھیں

پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان پہلا ٹیسٹ ڈرا ہوگیا

 کراچی: پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان دو میچوں پر مشتمل سیریز کا پہلا ٹیسٹ میچ …