آئرلینڈ کا خواب سچ ، مگر 25 سال بعد


ڈبلن ( سپورٹس ڈیسک/میڈیا92نیوز) 18ویں صدی میں کرکٹ شروع کرنے والے آئرلینڈ کو 250 برس کے طویل اور صبرآزما انتظار کے بعد خوابوں کی تعبیر ملنے والی ہے۔ آئی سی سی ورلڈکپ میں کے مختلف ایڈیشنز میں پاکستان، انگلینڈ، زمبابوے اور ویسٹ انڈیز کو ہرانے والے آئرش کرکٹرز پہلی مرتبہ جمعہ کو روایتی سفید کٹ میں پاکستان سے مقابلہ کرنے میدان کا رخ کریں گے۔ آئرش کرکٹ کی تاریخ کافی دلچسپ ہے۔ 1855 میں پہلی آئرش قومی کرکٹ ٹیم نے انگلینڈ کےخلاف ڈبلن میں باقاعدہ میچ کھیلا۔ آئرش کرکٹ یونین ( آئی سی یو) کا قیام 1923 میں عمل میں آیا۔ ایک دور ایسا بھی آیا کہ80 برس سے زائد عرصے تک ملک میں کرکٹ نہیں کھیلی گئی۔ آئرش ایتھلیٹک ایسوسی ایشن نے ملک میں کرکٹ سمیت تمام غیرملکی کھیلوں پر پابندی لگادی۔ یہ حکم اتنا سخت تھا کہ کرکٹ میچ دیکھنا بھی کسی کیلئے مصیبت کا سبب بن سکتا تھا۔ تاہم 1971میں پابندی ختم کردی گئی۔ اس دوران کرکٹ کسی نہ کسی طرح جاری رہی۔ 1993 میں اسے آئی سی سی نے ایسوسی ایٹ رکن کا درجہ دیا۔ اگلے سال کھیلی گئی پہلی آئی سی سی ٹرافی میں آئرلینڈ نے 20ممالک

میں ساتویں پوزیشن حاصل کی جبکہ 1997میں سیمی فائنل تک رسائی حاصل کی۔ آئرلینڈ نے 1996، 1999، 2003اور 2007کے ورلڈکپ کیلیے کوالیفائی کیا اور اس دوران ٹیسٹ ٹیموں کو ہرا کر تہلکہ بھی مچایا۔ اس کارکردگی سے حوصلہ پاتے ہوئے آئی سی یو نے ٹیسٹ اسٹیٹس حاصل کرنے کی ٹھانی اور 2013 میں بین الصوبائی کرکٹ چیمپئن شپ شروع کرائی اسے 2016 میں آئی سی سی نے فرسٹ کلاس ٹورنامنٹ کا درجہ دیا۔ ٹورنامنٹ کے عمدہ معیار اور انٹرنیشنل کرکٹ میں اچھے نتائج کے صلے میں اسے 2017 میں ٹیسٹ اسٹیٹس دے دیا گیا۔

یہ بھی پڑھیں

عام انٹرنیٹ سے 45 لاکھ گُنا تیز انٹرنیٹ

برمنگھم: سائنس دانوں نے انٹرنیٹ اسپیڈ کا نیا ورلڈ ریکارڈ قائم کیا ہے جو موجودہ براڈ …