پی ایس ایل فور میں تین بڑے نام شامل ہوگئے……….


کراچی (سپورٹس ڈیسک/میڈیا92نیوز) آسٹریلیا کی جانب سے حالیہ بدنام زمانہ بال ٹیمپرنگ تنازع کے مرکزی کردار اوپنر ڈیوڈ وارنر آئندہ سال پاکستان سپر لیگ کے چوتھے ایڈیشن میں ایکشن میں دکھائی دیں گے۔ جبکہ اس بات کے امکانات روشن ہیں کہ آسٹریلین آل رائونڈر شین واٹسن آئندہ پاکستان سپر لیگ میں ایکشن میں دکھائی نہ دیں۔ انہوں نے کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کی جانب سے پلے آف کے لئے لاہور جانے سے انکار کردیا تھا۔ ذمے دار ذرائع کا کہنا ہے کہ پاکستان سپر لیگ کے چوتھے ایڈیشن کے لئے پلیئرز ڈرافٹنگ کی فہرست میں ڈیوڈ وارنر کا نام بھی شامل ہوگا۔ گذشتہ ہفتے لاہور میں ہونے والی میٹنگ میں پی ایس ایل فرنچائز کے نمائندوں نے ڈرافٹنگ سمیت مختلف امور پر بات چیت کی تھی۔ پی سی بی کی جانب سے جن تین بڑے ناموں کو اگلے ایڈیشن کی فہرست میں شامل کرنے پر غور کیا گیا ان میں ڈیوڈ وارنر ، ڈیوڈ ملر اور مورنے مورکل شامل تھے۔ بائیں ہاتھ کے اوپنر پر کرکٹ آسٹریلیا نے انٹرنیشنل اور ڈومیسٹک کرکٹ میں شرکت پر ایک سال کی پابندی لگادی ہے۔ تاہم یہ

پابندی ٹورنامنٹ سے قبل ختم ہوجائے گی۔ تاہم ڈیوڈ وارنر اس سے قبل دنیا کے کسی بھی ٹورنامنٹ میں شرکت کرسکتے ہیں۔ آسٹریلیا ٹیم کے سابق نائب کپتان کی جانب سے فی الحال پی ایس ایل میں شرکت سے متعلق کوئی ردعمل سامنے نہیں آیا ہے ۔ البتہ ذرائع کا کہنا ہے کہ وہ پی ایس ایل کو انٹرنیشنل کرکٹ میں اپنی واپسی کا راستہ قرار دے سکتے ہیں۔ لاہور کی میٹنگ میں شین واٹسن پر سب سے زیادہ تحفظات سامنے آئے اور یہ تجویز دی گئی کہ ایسے کھلاڑیوں پر پابندی لگا دی جائے جو وعدہ کرنے کے باوجود پاکستان نہیں آئے۔ پاکستان سے ٹورنامنٹ شروع کرنے کی بڑی وجہ یہ بتائی گئی ہے کہ جو کھلاڑی پاکستان آنے کا وعدہ کرے گا اسے افتتاحی میچوں اور افتتاحی تقریب کے لئے شروع ہی سے پاکستان آنا پڑے گا۔ اگر کوئی کھلاڑی انکار کرتا ہے تو اس سے معاہدہ نہیں کیا جائے گا۔ سابق کپتان راشد لطیف نے کراچی کنگز کے نمائندے کی حیثیت سےتجویز دی ہے کہ اگر کوئی کھلاڑی وعدے کے باوجود پاکستان نہیں آتا ہے تواس کا معاوضہ فرنچائز نہیں پاکستان کرکٹ بورڈ ادا کرے گا۔ کھلاڑیوں کی ڈرافٹنگ کے دوران رینڈم پک کی تجویز رد کردی گئی اور آخری نمبر پر آنے والی لاہور قلندر کی ٹیم ڈرافٹنگ میں پہلا کھلاڑی منتخب کرے گی۔

یہ بھی پڑھیں

عام انٹرنیٹ سے 45 لاکھ گُنا تیز انٹرنیٹ

برمنگھم: سائنس دانوں نے انٹرنیٹ اسپیڈ کا نیا ورلڈ ریکارڈ قائم کیا ہے جو موجودہ براڈ …