ہائیکورٹ نے الیکشن ایکٹ 2017کے خلاف درخواست…

لاہور(میڈیا 92 نیوز) ہائیکورٹ نے الیکشن ایکٹ 2017کے خلاف درخواست پر  درخواستگزار سے درخواست قابل سماعت ہونے سے متعلق آئیندہ سماعت پر دلائل طلب کر لیے تفصیلات کے مطابق لاہور ہائیکورٹ نے  تحریک انقلاب کے سربراہ  علم الدین غازی کی درخواست پر سماعت کی درخواست میں الیکشن ایکٹ 2017 کی متعدد دفعات کو چیلنج کیا گیا ہے درخواست میں  وفاقی حکومت وزارت قانون اور الیکشن کمشن کو فریق بنایا گیا ہے درخواستگزار نے عدالت کو بتایا کہ  الیکشن ایکٹ کی دفعات 201۔202۔209 اور 210 نے عام آدمی سے انتحابات میں حصہ لینے کا حق چھین لیا ہے درخواستگزار نے موقف اختیار کیا ہے کہ الیکشن کمیشن نے الیکشن ایکٹ 2017کے تحت سیاسی جماعت کی فیس 2لاکھ روپے مقررکی ہے,,,,درخواستگزار کے مطابق الیکشن کے موجودہ نظام کے تحت صرف سرمایہ دار اور جاگیردار ہی انتحاب لڑ سکتا ہے.

رخوسستگزار نے اعتراض عائدکی ہے کہ اایکٹ کے تحت عام انتحابات میں اساتذہ ڈاکٹرز اور دیگر طبقوں کو نمائیدگی نہیں دی جاتی درخواستگزار نے استدعا کی ہے کہ عدالت الیکشن ایکٹ 2017 کی دفعات میں ترمیم کا حکم دے عدالت نے درخواستگزار سے درخواست کے قابل سماعت ہونے سے متعلق آئیندہ سماعت پر دلائل طلب کر لیے 

یہ بھی پڑھیں

عام انٹرنیٹ سے 45 لاکھ گُنا تیز انٹرنیٹ

برمنگھم: سائنس دانوں نے انٹرنیٹ اسپیڈ کا نیا ورلڈ ریکارڈ قائم کیا ہے جو موجودہ براڈ …