ڈی جی نیب نے عدالتی حکم پر شہری کو کمرہ عدالت میں دس لاکھ روپے کا چیک ادا کردیا۔

لاہور(میڈیا 92 نیوز) لاہور ہائیکورٹ میں عدالت نے توہین عدالت کی درخواست پر مزید کاروائی 21 مئی تک ملتوی کردی۔تفسیلات کے مطابق لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس قاسم علی خان کی سربراہی پر مشتمل دو رکنی بینچ نے شہری چوہدری طفیل کی درخواست پر سماعت کی۔عدالت کے روبرو ڈی جی نیب سلیم شہزاد  میں پیش ہوا۔عدالت نے شہری کی درخواست پر ڈی جی نیب سے استفسار کرتے ہوئے پوچھا کہ نیب حکام کیوں متاثرہ شہریوں کو پری بارگینگ کی رقم جلد واپس نہیں کرتے۔شہریوں کو رقم لیٹ ادا کیوں کی جاتی ہے۔جس پر ڈی جی نیب نے بتایا کہ تمام شہریوں کو بروقت رقم ادا کی جاتی ہے تاہم بعض شہری دفتر آ کر جکد چیک وصول نہیں کرتے۔عدالت نے مزید کہا کہ نیب بینک میں دیر پا رقم رکھنے کا سود تو وصول نہیں کرتا اس کی تحقیقات کی جانی چاہیں۔عدالتی حکم پر ڈی جی نیب نے کمرہ عدالت میں شہری کو دس لاکھ روپے کا چیک ادا دے دیا۔اور باقی رقم کی ادائیگی کے لیے عدالت سے مہلت مانگی لی۔جس پر عدالت نے کاروائی کرتے ہوئے توہین عدالت کی درخواست پر مزید کاروائی 23 مئی تک ملتوی کردی

یہ بھی پڑھیں

عام انٹرنیٹ سے 45 لاکھ گُنا تیز انٹرنیٹ

برمنگھم: سائنس دانوں نے انٹرنیٹ اسپیڈ کا نیا ورلڈ ریکارڈ قائم کیا ہے جو موجودہ براڈ …