دنیا کا پہلا بینک متعارف سارا عملہ روبوٹس پر مشتمل


شنگھائی (ٹیکنالوجی ڈیسک/ میڈیا92 نیوز) چین میں دنیا کا پہلا بینک کھولا گیا ہے جس میں انسانی عملہ نہیں اور ان کی جگہ روبوٹ افسران مختلف امور انجام دیتے ہیں ۔دنیا میں کسی بھی بینک کی یہ پہلی شاخ ہے جہاں چہرے کی شناخت ،مجازی حقیقت (ورچوئل رئیلٹی ) اور مصنوعی ذہانت (آرٹی فیشل انٹیلی جنس ) سمیت جدید رجحانات کو استعمال کیا گیا ہے اور یہہاں انسان نماروبوٹ آپ کی خدمت کیلئے حاضر ہیں ۔یہ برانچ چائنا کنسٹرکشن بینک (سی سی بی ) نے شنگھائی میں کھولی ہے جہاں ٹیکنالوجی سے لگاﺅ رکھنے والے صارفین بڑی تعداد میں آرہے ہیں اور خود بینک بھی زیادہ تنخواہ والے سٹاف کو بھرتی نہ کرنے پر خوش ہے ۔اس بینک میں قدم رکھیں تو ایک انسان نما (ہیومینوئیڈ) روبوٹ ،آواز پہنچانے والی ٹیکنالوجی استعمال کرتے ہوئے آپ سے بات چیت کرتا ہے ۔ بینک میں کئی اے ٹی ایم اور خود کا مشقیں ہیں ۔یہ مشینیں اکاﺅنٹ کھولنے ،رقم کی منتقلی ،منی ایکسپینج ،سونے میں سرمایہ کاری اور دیگر خدمات فراہم کرتی ہیں ۔بینک انتظامیہ کے مطابق انسانوں کے بغیر کام کرنے والا یہ خود کار بینک رقم اور غیر رقمی سہولیات کی 90 فیصد ضروریات پوری کرسکتا ہے ۔علاوہ ازیں کسی مشکل کی صورت میں صارفین ویڈیو لنک کے ذریعے دور بیٹھے انسانی افسران سے بات چیت بھی کر سکتے ہیں ۔سی سی بی کے مطابق یہ شاخ ٹیکنالوجی کی آزمائش اور اسے بہتر بنانے میں بہت مددگار ثابت ہوگی تاہم بینک نے کہا ہے کہ بااثر او ر میرا صارفین کیلئے انسانی عملہ بھی ضروری ہے ۔

یہ بھی پڑھیں

عام انٹرنیٹ سے 45 لاکھ گُنا تیز انٹرنیٹ

برمنگھم: سائنس دانوں نے انٹرنیٹ اسپیڈ کا نیا ورلڈ ریکارڈ قائم کیا ہے جو موجودہ براڈ …