Pakistani police officers cordon off the area of a bomb blast in Raiwind near Lahore, Pakistan, Wednesday, March 14, 2018. A suspected suicide attack near a police checkpoint killed many wounded others on Wednesday near the eastern city of Lahore, police said. (AP Photo/K.M. Chaudary)

انسداددہشت گردی کی خصوصی عدالت عدلیہ مخالف تقاریر کرنے والے مزید 10 ملزمان کا 4 دن کا  جسمانی ریمانڈ منظور کر لیا

لاہور(میڈیا 92 نیوز) انسداددہشت گردی کی خصوصی عدالت نےعدلیہ مخالف تقاریر کرنے والے مزید 10 ملزمان کا 4 دن کا  جسمانی ریمانڈ منظور کر لیا اور مجسٹریٹ کی عدالت سے ضمانت کروانے والے ملزمان کی گرفتاری کی اجازت دے دی ۔انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت میں عدلیہ مخالف تقاریر کیس کی سماعت ہوئی ۔ عدالت نے 10 ملزمان کے جسمانی ریمانڈ کے حوالے سے پولیس اور پراسیکیوشن کی  استدعا پر  ملزمان کو چار دن کے جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کرنے کا حکم دے دیا ۔انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت کے پراسکیوٹر عبدالروف وٹو نے عدالت کو بتایا کہ نامزد ملزمان نے 13 اپریل کو قصور کشمیر چوک پر، احتجاجی مظاہرہ کیا اور ملزمان نے احتجاج کے دوران عدلیہ مخالف اشتعال انگيز نعرے بازی اور تقاریر بھی کی گئیں۔ پراسکیوٹر عبدالروف وٹو  نے مزید بتایا کہ ملزمان کیخلاف ویڈیو ثبوت موجود ہیں، انکے ویڈیو کمپرژن کروانا باقی ہےاور 10 ملزمان کے فوٹو گرامٹیک ٹیسٹ کےلیے درخواست  بھی دےدی ہے۔ملزمان کے وکیل نے مخالفت کرتے ہوئے استدعا  کی کہ ملزمان کیخلاف جو ایف آئی آر درج ہوئے اسکے مطابق سیون اے ٹی اے شامل نہین ہوسکتی اور ملزمان کے وکیل نے فوٹو گرامٹک درخواست کی مخالفت کردی اور عدالت میں موقف اختیار کیاکہ پولیس نے جن ملزمان کو گرفتار کیا انکا احتجاج سے کوئی تعلق نہیں ہے ۔عدالت نے ریمارکس دیے کہ یہ ایک حساس نوعیت کا معاملہ ہے۔ عدالت نے ملزمان کرامت علی،  محمد رزاق،  مبارک،  الیاس،  فیاض ، محمد یوسف ، غلام مرتضی،  نثار احمد اور عبدالمجید کا چار دن کا جسمانی ریمانڈ منظور کیا۔

یہ بھی پڑھیں

امریکا اسرائیل کو 2 ہزار پونڈ وزنی بم سمیت دیگراسلحہ فراہم کرے گا

 واشنگٹن: امریکا نے اسرائیل کو اربوں ڈالر کے بم اور لڑاکا طیارے بھیجنے کی منظوری دے …