گوگل کروم کے دو کروڑ صارفین ایڈ بلاک مال وئیر سے متاثر..

ٹیکنالوجی ڈسیک/میڈیا 92 نیوز) ایک مشہور شعر کا مصرعہ ہے کہ "جن پہ تکیہ تھا وہی پتے ہوا دینے لگے”. کچھ یہی حال گوگل کروم براؤزر استعمال کرنے والے ایسے صارفین کا ہوا ہے جنہوں نے اپنے براؤزر میں اشتہارات کو بند کرنے کے لیے ایڈ بلاک (اشتہار روک پروگرام) نصب کیا تھا۔ لیکن اسی ایڈ بلاک میں چھپے خفیہ کوڈ کی مدد سے ان کی معلومات چرا لی گئیں۔

دنیا بھر کے انٹرنیٹ صارفین، ویب سائٹس پر دکھائی دینے والے غیر ضروری اشتہارات سے بچنے کے لیے اپنے براؤزرز میں ایڈ بلاک کو نصب کرتے ہیں۔ تا کہ سپیمرز اور اشتہاراتی کمپنیوں کی جانب سے استعمال کیے جانے والے مختلف حربوں کا توڑ نکالا جا سکے۔ لیکن خبر ہے کہ ان ایڈ بلاکس میں سے اکثریت نا صرف جعلی ہے۔ بلکہ الٹا انہیں صارفین کے کمپیوٹرز کو ہیک کرنے کے لیے بھی استعمال کیا جاتا رہا ہے۔
یہ خبر ایک تحقیقاتی فرم ایڈ گارڈ کی جانب سے دی گئی ہے۔ جو کہ خود بھی "اشتہار روک” پروگراموں پر کام کرتی ہے۔ ایڈ گارڈ کا کہنا ہے کہ ہیکرز نے گوگل کروم براؤزر پر پانج بڑی ایڈ بلاک ایکسٹنشن کی جعلی کلون اپلوڈ کر کے دو کروڑ سے زائد کروم استعمال کنندگان کو بے وقوف بنایا۔ اور بڑے پیمانے پر معلومات چرائیں۔
ان اشتہار روک ایکسٹنشنز میں ایک کروڑ متاثرین کے ساتھ ایڈ ریموور، اسی لاکھ کے ساتھ یو بلاک پلس اور بیس لاکھ متاثرہ صارفین کے ساتھ ایڈ بلاک پرو سرفہرست ہیں۔ مجموعی طور پر دو کروڑ صارفین کے کمپیوٹرز اور اسمارٹ فونز متاثر ہوئے ہیں۔
خبر کے مطابق ان کروم ایکسٹینشنز کو "ایڈ بلاکر” کی ورڈ کی تلاش کے نتائج میں سرفہرست لانے کے لیے ہیکرز نے مخصوص تکنیکیس استعمال کیں۔ جس کے بعد جونہی کسی کروم صارف نے ان ایکسٹنشنز کو اپنے براؤزر میں نصب کیا تو اس کی جاوا اسکرپٹ لائبریری میں چھپے جے کیوری کوڈ نے براؤزر پر حملہ کرتے ہوئے صارف کی تمام معلومات چرا لیں۔ یوں بجائے مدد کے الٹا آستین کے سانپ کا کردار ادا کیا۔
خبر سامنے آنے کے بعد گوگل نے تمام جعلی اشتہار روک ایکسٹنشنز کو اپنے اسٹور سے ختم کر دیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں

امریکا اسرائیل کو 2 ہزار پونڈ وزنی بم سمیت دیگراسلحہ فراہم کرے گا

 واشنگٹن: امریکا نے اسرائیل کو اربوں ڈالر کے بم اور لڑاکا طیارے بھیجنے کی منظوری دے …