سمندر میں خزانہ ڈھونڈنے کیلئے غوطہ خور روبوٹ تیار


نیویارک (ٹیکنالوجی ڈیسک/ میڈیا92 نیوز) امریکہ کی ایک یونیورسٹی نے بہرہ روم کی تہہ سے ستر ہویں صدی کا خزانہ ڈھونڈ نکالنے کیلئے غوطہ خورروبوٹ تیار کرلیا ہے ۔”اوش ون“ نامی اس روبوٹ کو سٹینفورڈ یونیورسٹی کے پروفیسر اسامہ خطیب نے تخلیق کیا ہے ۔اوش ون نامی پانچ فٹ کے اس روبوٹ کو سوچنے سمجھنے کے لیے مصنوئی دماغ کے ساتھ ساتھ تیز رفتا ری سے تیرنے کے لیے دو ہاتھ اور پیر بھی نصب گئے ہیں ۔مصنوعی ہاتھوں کی اور دماغ کی بدولت یہ روبوٹ کسی بھی چیز کو سمندر کی تہہ میں باآسانی پکڑنے کی صلاحیت رکھتا ہے ۔روبوٹ انسانی غوطہ خور کی طرح سمندر کی تہہ سے ملنے والی چیزوں کو اکٹھا کرکے جہاز تک بہ خوبی لے آتا ہے ۔روبوٹ کے خالق اسامہ جہاز میں ہی بیٹھ کر با آسانی روبوٹ کو کنٹرول کر سکتے ہیں ۔

یہ بھی پڑھیں

عام انٹرنیٹ سے 45 لاکھ گُنا تیز انٹرنیٹ

برمنگھم: سائنس دانوں نے انٹرنیٹ اسپیڈ کا نیا ورلڈ ریکارڈ قائم کیا ہے جو موجودہ براڈ …