سرکاری اشتہارات پر سیاسی رہنماﺅں کی تصاویر کیس،سیکرٹری اطلاعات کی رپورٹ مسترد،تفصیلی رپورٹ پیش کرنےکا حکم

کراچی (میڈیا 92نیوز/مانیٹرنگ ڈیسک)سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں سرکاری اشتہارات پرسیاسی رہنماﺅں کی تصاویرکیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس ثاقب نثار نے سیکرٹری اطلاعات کی پیش کردہ رپورٹ مسترد کردی اور 3 اپریل کو تفصیلی رپورٹ کے ہمراہ پیش ہونے کا حکم دے دیا۔تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں 3 رکنی بنچ نے سرکاری اشتہارات پر سیاسی رہنماﺅں کی تصاویر کیس کی سماعت کی۔سیکرٹری اطلاعات نے وہی رپورٹ دوبارہ پیش کردی جس پر چیف جسٹس پاکستان نے سخت برہمی کا اظہار کیا۔چیف جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ آپ سے سندھ حکومت کے اشتہارات سے متعلق رپورٹ مانگی تھی، آپ نے ہمیں پرانی رپورٹ پیش کردی۔سیکرٹری اطلاعات نے استدعا کی کہ مہلت دی جائے تفصیلی رپورٹ عدالت میں پیش کردیں گے۔چیف جسٹس پاکستان نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ بتایاجائے کہ گزشتہ 5 سال میں کتنے اشتہارات جاری کئے گئے اوراشتہارات پرکتنی رقم خرچ ہوئی؟چیف جسٹس ثاقب نثارنے ریمارکس دیئے کہ یہ بھی بتایا جائے کہ اشتہارات پرکون سے سیاسی رہنماﺅں کی تصاویرآویزاں کی گئیں؟۔عدالت نے سیکرٹری اطلاعات کی پیش کردہ رپورٹ مستردکردی اور 3اپریل کوتفصیلی رپورٹ کے ہمراہ پیش ہونے کاحکم دے دیا

یہ بھی پڑھیں

عام انٹرنیٹ سے 45 لاکھ گُنا تیز انٹرنیٹ

برمنگھم: سائنس دانوں نے انٹرنیٹ اسپیڈ کا نیا ورلڈ ریکارڈ قائم کیا ہے جو موجودہ براڈ …