پارلیمنٹ کے قانون بھی عدالتی توثیق کے محتاج ہوں تویہ کون سا آئین ہے، نوازشریف

اسلام آباد(بیورو رپورٹ/میڈیا 92نیوز)سابق وزیراعظم نوازشریف کا کہنا ہےکہ پارلیمنٹ کے قانون بھی عدالتی توثیق کے محتاج ہوجائیں تویہ کون سا آئین ہے۔

میڈیا 92نیوزکے مطابق اپنے ایک بیان میں نوازشریف نے کہاکہ پارلیمنٹ کابنایا گیا قانون من مانی تعبیر سےختم کرنا خطرناک ہوگا، پارلیمنٹ کےکسی قانون کی تشریح کی ضرورت ہے تو ابہام دور کرنے پارلیمنٹ بھیجنا چاہیے، پارلیمنٹ کے قانون بھی عدالتی توثیق کے محتاج ہوجائیں تویہ کون سا آئین ہے۔

سابق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ آئین ریاست کا نظام چلانے والی سب سے مقدس دستاویز ہے، آئین کی دستاویز عوام کے منتخب نمائندوں کی پارلیمنٹ ہی بناتی ہے، پارلیمنٹ آئین کے ذریعے دیگر اداروں اور اپنی حدود کا بھی تعین کرتی ہے۔

میاں نوازشریف نے مزید کہا کہ اداروں کا احترام ان اداروں کی کارکردگی اور احترام سے ہوتاہے، پارلیمنٹ کو دنیا بھر میں اداروں کی ماں بھی سمجھاجاتاہے، جج صاحبان کا آئین کو مقدس اور بالا تر دستاویز قرار دینا خوش آئند ہے۔

یہ بھی پڑھیں

محکمہ ٹرانسپورٹ پنجاب کا روڈا اور سی بی ڈی پنجاب میں سفری سہولیات کے لئے نئے نظام کی تشکیل کا فیصلہ

محکمہ ٹرانسپورٹ پنجاب نے عصر حاضر کے تقاضوں کو مد نظر رکھتے ہوئے روڈا اور …