پنجاب میں ینگ ڈاکٹرز کی ہڑتال دسویں روز بھی جاری

پنجاب کے سرکاری اسپتالوں میں ینگ ڈاکٹرز کی ہڑتال دس روز سے جاری ہے جس کی وجہ سے مریضوں کی مشکلات بڑھ گئی ہیں ۔
پنجاب حکومت اب تک 70 سے زائد ہڑتالی ڈاکٹروں کو ملازمت سے برطرف کرچکی ہے اور نئے ڈاکٹرز کی بھرتی کا عمل بھی جاری ہے۔
انڈکشن پالیسی اور سیکریٹری ہیلتھ کی برطرف کا مطالبہ لیے لاہور سمیت پنجاب کے دیگر شہروں میں ینگ ڈاکٹرز کی ہڑتال آج بھی جاری ہے جس کےباعث دور دراز سے آئے مریضوں شدید پریشانی کا شکار ہیں۔
لاہور کے سول اور جناح اسپتال سمیت ملتان کے نشتر اسپتال، انسٹی ٹیویٹ آف کارڈیالوجی، سول اسپتال، چلڈرن کمپلیکس، شہباز شریف اسپتال اور دیگر سرکاری اسپتالوں میں ہڑتال جاری ہے جس کی وجہ سے او پی ڈی میں مریضوں کو طبی سہولیات کی فراہمی معطل ہے۔
فیصل آباد، رحیم یار خان اور گجرات سمیت دیگر شہروں میں بھی ہڑتال کے باعث ینگ ڈاکٹرز صرف ایمرجنسی سروسز میں اپنی ڈیوٹیز دے رہے ہیں ۔
دوسری جانب پنجاب کے وزیر صحت نے ینگ ڈاکٹرز کو آج مذاکرات کی دعوت دی ہے جو دوپہر 2 بجے تک ہونے کے امکانات ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

پٹرولیم مصنوعات ایک بار پھر مہنگی ہونے کا امکان

وگرا نے قیمتوں میں 10 روپے فی لٹر تک اضافے کی سمری ارسال کردی، حتمی …