جذام کے مریضوں کا علاج کرنے والی ڈاکٹر رتھ فاؤانتقال کر گئی

کراچی (میڈیا پاکستان ) جذام کے مریضوں کیلئے کام کرنے والی ڈاکٹر رتھ فاؤ کراچی کے نجی ہسپتال میں انتقال کرگئیں۔
سی ای او میری ایڈیلیڈ سنٹر ڈاکٹر مارون لوبو کے مطابق ڈاکٹر رتھ فاﺅ 2 ہفتے سے کراچی کے نجی ہسپتال میں زیر علاج تھیں اور بدھ اور جمعرات کی درمیانی شب رات ساڑھے 12 بجے 87 برس کی عمر میں انتقال کر گئیں۔ ڈاکٹر رتھ فاؤ کی آخری رسومات 19 اگست کو سینٹ پیٹرکس چرچ صدر میں ادا کی جائیں گی۔
واضح رہے کہ ڈاکٹر رتھ فاﺅ 9 ستمبر 1929 کو جرمن شہر لیپزگ میں پیدا ہوئیں اور 1960 میں پاکستان آکر جذام کے مرض پر قابو پانے کیلئے بے لوث خدمات سر انجام دیں۔ ان کی کوششوں کی بدولت 1996 میں پاکستان جذام کے مرض سے پاک ہونے والا پہلا ایشیائی ملک بن گیا۔ ڈاکٹر رتھ فاﺅ کی خدمات کے عوض حکومت پاکستان نے انہیں 1988 میں پاکستان کی مستقل شہریت سے نوازا جبکہ ان کی خدمات کے اعتراف میں انہیں ستارہِ قائد اعظم، ہلالِ امتیاز، ہلالِ پاکستان ، جناح ایوارڈ اور نشانِ قائدِ اعظم سے نوازا گیا۔

یہ بھی پڑھیں

پٹرولیم مصنوعات ایک بار پھر مہنگی ہونے کا امکان

وگرا نے قیمتوں میں 10 روپے فی لٹر تک اضافے کی سمری ارسال کردی، حتمی …