عدلیہ کے قواعد و ضوابط کے قوانین پر عمل درآمد نہ کرنے کے اقدام کو سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں چیلنج کر دیا گیا

لاہور(میڈیا92نیوز)یہ آئینی درخواست سینئیر قانون دان میاں ظفر اقبال کلانوری کی جانب سے دائر کی گئی ہے، درخواست میں میں چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ، سندھ، بلوچستان، اسلام آباد، خیبر پختونخواہ کو فریق بنایا گیا ہے، آئینی درخواست میں کہا گیا ہے کہ آئین کے آرٹیکل دو سو تین کے تحت صوبائی عدلیہ کوضلعی عدلیہ کی مانیٹرنگ کے لئے سپروائزری کردار حاصل ہے مقدمات کو جلد نمٹانے،ججز اور عدالتی عملے کے خلاف سائلین کی شکایات کے ازالے،ججز کے سروس سٹرکچر کے نفاذ اور ضلعی عدالتوں کےانتظامی امور نمٹانے کے لئے ملک بھر کی کسی ہائیکورٹ نے قواعد نہیں بنائے درخواست میں کہا گہا ہے کہ قواعد موجود نہ ہونے کی بنائ پر ملک بھر میں مقدمات سالہا سال زیر التوائ رہتے ہیں، لہذا عدالت ملک بھر کی ہائیکورٹس کو آئین کے آرٹیکل دو سو تین کے تحت موثر سپروائزری کردار ادا کرنے کا پابند بنائے،۔

یہ بھی پڑھیں

سارہ انعام قتل کیس میں شوہر شاہنواز کو سزائے موت کا حکم

اسلام آباد: کینیڈین شہری سارہ انعام قتل کیس میں ملزم شوہر شاہنواز امیر کو عدالت نے …