اراضی کی خریدو فروخت ، ایڈیشنل آئی جی سمیت افسروں کو رپورٹ پیش کرنے کا حکم

لاہور(کورٹ رپورٹر) اراضی کی خریدو فروخت کا کیس سول کورٹ میں زیر التواء ہونےکےباوجود اندراج مقدمہ کامعاملہ، ہائیکورٹ میں مقدمہ میں ملوث ملزم کی عبوری ضمانت پر سماعت، ایڈیشنل آئی جی انویسٹی گیشن فیاض احمد دیو، ایس ایس پی انویسٹی گیشن سمیت دیگر افسران پیش، عدالت نے آئی جی کو 24 فروری کو مفصل رپورٹ پیش کرنے کا حکم دے دیا۔تفصیلات کے مطابق جسٹس صداقت علی خان نے ملزم اسد رضاکی ضمانت قبل ازگرفتاری کی درخواست پرسماعت کی۔ درخواست گزارنےموقف اختیارکیا کہ ملک منیرکھوکھرسے رائیونڈ روڈ پر 38 کینال کی خریداری کا معاہدہ کیا۔ معاہدے پرعملدرآمد نہ ہونے پر معاملہ سول کورٹ چلا گیا۔ فریقین کا معاملہ سول کورٹ میں ہونےکے باوجود فریق دوئم نےمقدمہ درج کروا دیا۔ ملک منیرکی مدعیت میں شمالی چھاونی پولیس نے فراڈ کی دفعات کےتحت مقدمہ درج کروایا۔ مقدمہ میں بوگس دستاویزات تیارکرنے سمیت دیگر الزامات لگائے گئے۔ درخواستگزارنے استدعا کی کہ عدالت ضمانت قبل ازگرفتاری کنفرم کرنےکاحکم دے۔عدالتی حکم پر ایس ایس پی انویسٹی گیشن توصیف حیدر پیش ہوئے لیکن وہ عدالت کو مطمئن نہ کرسکے۔ جس پرعدالت نےآئی جی کوفوری پیش ہونےکا حکم دیا۔کچھ دیربعد دوبارہ سماعت شروع ہوئی تو ایڈیشنل آئی جی انویسٹی گیشن فیاض احمد دیو، ایس ایس پی انویسٹی گیشن عبدالغفار قیصرانی، ایس ایس پی سی آئی اے توصیف حیدر سمیت دیگر افسران پیش ہوئےاور عدالت کوآگاہ کیا کہ آئی جی اسلام آباد میں ہونےکےباعث پیش نہیں ہوسکے۔جس پرعدالت نےسماعت چوبیس فروری تک ملتوی کرتےہوئےآئی جی کودونوں پارٹیوں کوسُن کر آئندہ سماعت پر مفصل رپورٹ پیش کرنےکا حکم دے دیا۔عدالت نےملزم کی عبوری ضمانت میں بھی آئندہ سماعت تک توسیع کردی۔

یہ بھی پڑھیں

این اے 75 ڈسکہ دھاندلی کیس، پی ٹی آئی نے بیرسٹرعلی ظفراپنا وکیل مقرر کردیا

اسلام آباد(نیوزڈیسک)این اے 75 ڈسکہ بے ضابطگیوں کے کیس میں تحریک انصاف نے اپنا وکیل …