بلدیہ عظمی لاہور کےلئے آگ بجھانے والی ایک بھی نئی گاڑی نہیں خریدی گئی جبکہ پرانی گاڑیاں خراب ہیں

لاہور(میڈیا92 نیوز،رپورٹ) پنجاب حکومت کے موجودہ اور سابقہ دور کے پونے دس سالہ عرصہ میں بلدیہ عظمی لاہور کےلئے آگے بجھانے والی ایک بھی نئی گاڑی نہیں خریدی گئی جبکہ پرانی گاڑیاں خراب رہنا معمول ہے اور بہتر کارکردگی کا مظاہرہ کرنے سے بھی قاصر ہیں۔ اس کے علاوہ فائیر بریگیڈ کے عملہ کی استعداد کار بڑھانے کےلئے کوئی اقدامات نہیں کیے گئے ۔ تفصیلات کے مطابق مسلم لیگ(ق) کے دورحکومت کے بعد لاہور کےلئے تاحال فائر بریگیڈ کو موجودہ دورکے تقاضوں سے ہم آہنگ کرنے کےلئے فائر ٹینڈر کی کوئی نئی گاڑی نہیں خریدی گئی۔ مسلم لیگ(ن) کی حکومت کی جانب سے گزشتہ ایک دہانی میں متعدد بار تجاویز موصول ہونے اور آگ لگنے کے واقعات میں قیمتی انسانی جانوں کے ضیاع کے باوجود فائر بریگیڈ کے شعبہ میں جدت لانے کےلئے کوئی اقدام نہیں کیا گیا۔ مسلم لیگ(ق) کی حکومت ختم ہوئی تو فائر بریگیڈ کے پاس لاہور میں16گاڑیاں موجود تھیں اور ان کی تعداد آج بھی اتنی ہی ہے۔ گاڑیاں پرانی اورکھٹارہ ہونے کی وجہ سے وقت پر جائے حادثہ پر تاخیر سے پہنچنے کے ساتھ ساتھ ان میں نصب ساز وسامان اپ گریڈ نہ ہونے سے بھی آگ بجھانے میں بہتر کارکردگی کا مظاہرہ نہیں کیا جاسکتا۔ فائر ٹینڈر کی 16میں سے6گاڑیاں 13سال جبکہ باقی10اس سے زائد پرانی ہیں۔ ان گاڑیوں کا خراب رہنا معمول ہونے کے علاوہ متعدد کی ٹینکیاں بھی لیک ہیں۔ فائر بریگیڈ کے پاس موجود سازوسامان بلند عمارتوں میں لگی آگ بجھانے کی صلاحیت نہیں رکھتا۔

یہ بھی پڑھیں

حمزہ شہباز کی رہائی عثمان بزدار کے لئے خطرہ ،ڈاکٹر طارق فضل نے اندر کی بات بتادی

اسلام آباد (نیوز ڈیسک)مسلم لیگ (ن) کے مرکزی رہنما اور سابق وزیر مملکت ڈاکٹر طارق …