گیارہ سینٹرز کی کامیابی کے نوٹیفیکیشن کو لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج کردیا

لاہور(کورٹ رپورٹر میڈیا92نیوز)گیارہ سینٹرز کی کامیابی کے نوٹیفیکیشن کو لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج کردیا
گیا، درخواستگزار میں 11 سینیٹرز سمیت الیکشن کمیشن پاکستان اور وفاقی حکومت
کو فریق بنایا گیا ہے تفصیلات کے مطابق آئینی درخواست پاکستان تحریک انصاف کی
رہنما ڈاکٹر زرقا کی جانب سے لاہور ہائیکورٹ میں دائر کی گئی ہے درخواست میں
گیارہ سینٹرز الیکشن کمشن آف پاکستان اور وفاقی حکومت کو فریق بناتے ہوئے موقف
اختیار کیا گیا ہے کہ نواز شریف کی بطور پارٹی صدر نااہلی کے بعد الیکشن کمشن
نے نون لیگی امیدواروں کو آزاد امیدوار قرار دیا. الیکشن کمشن کی جانب سے نون
لیگی امیدواروں کو آزاد امیدوار قرار دینا غیر آئینی ہے. درخواست میں نشاندہی
کی گئی کہ سینٹر رانا محمود الحسن ۔مصدق مسعود ملک۔رانا مقبول احمد۔ڈاکٹر آصف
کرمانی نون لیگ کی ٹکٹ پر بطور آزاد امیدوار انتحاب لڑا. اس کے علاوہ شاہین
خالد بٹ۔ حافظ عبدالکریم۔اسحاق ڈار کامران مائیکل نے بھی بطور آزاد امیدوار
سینٹ کا، الیکشن لڑا. ہارون اختر خان۔سعدیہ عباسی اور نزہت صادق نے نون لیگ کی
ٹکٹ پر بطور آزاد امیدوار انتحاب لڑا. الیکشن کمشن آف پاکستان نے اختیارات سے
تجاویز کرتے ہوئے ازخود نون لیگی امیدواروں کو آزاد امیدوار قرار دیا جو کہ
قانون کے منافی ہے. لہذا عدالت الیکشن کمشن آف پاکستان کی جانب سے نون لیگی
امیدواروں کو آذاد قرار دینے کا نوٹیفیکیشن کالعدم قرار دے

یہ بھی پڑھیں

حمزہ شہباز کی رہائی عثمان بزدار کے لئے خطرہ ،ڈاکٹر طارق فضل نے اندر کی بات بتادی

اسلام آباد (نیوز ڈیسک)مسلم لیگ (ن) کے مرکزی رہنما اور سابق وزیر مملکت ڈاکٹر طارق …