یوٹیوب نے 80 لاکھ سے زائد فحش ویڈیوز ضائع کر دیں

یوٹیوب کمپنی کا کہنا ہےکہ اکتوبر سے دسمبر 2017 کے دوران 83 لاکھ ویڈیوز ضائع کی گئیں۔ ویڈیو شیئرنگ ویب سائٹ یوٹیوب کا کہنا ہے کہ اُس نے تین ماہ کے دوران ضوابط کی خلاف ورزی پر مبنی مواد والی 80 لاکھ سے زائد ویڈیوز کو تلف کیا ہے۔
یو ٹیوب نے یہ اعدادوشمار اپنی ’انفورسمنٹ رپورٹ‘ میں جاری کیے ہیں۔رپورٹ کے مطابق جنسی مواد پر مبنی ویڈیوز کو 91 لاکھ جبکہ نفرت انگیز مواد پر مبنی ویڈیوز کی شکایت 47 لاکھ افراد نے کی۔
کمپنی کا کہنا ہے کہ ویب سائٹ کے ضابطۂ کار کی خلاف ورزی پر مبنی مواد زیادہ تر شکایات انڈیا، امریکہ اور برازیل سے آئیں۔ یوٹیوب کا کہنا ہے کہ ضابطہ کار کی نگرانی کے نظام نے 67 لاکھ ویڈیوز کی نشاہدہی کی جسے بعد میں مختلف معائنہ کاروں کو بھیجنے کے بعد تلف کیا گیا۔

کمپنی نے بی بی سی میڈیا کو بتایا کہ ضائع کی گئی ویڈیوز کے ’فنگر پرنٹ‘ محفوظ ہیں تاکہ اگر یہ ویڈیوز دوبارہ اپ لوڈ کی جائیں تو ان کاپتہ لگایا جا سکے۔ یاد رہے کہ رواں سال مارچ میں برطانیہ میں کالعدم قرار دی گئی تنظیم نیو نازی گروپ نیشنل ایکشن کی چار پراپیگنڈہ ویڈیو کو ہٹانے میں ناکامی پر یوٹیوب کو تنقید کا نشانہ بنایا گیا تھا۔
یو ٹیوب نے مطلع کرنے کے طریقہِ کار یا ’رپورٹینگ ڈیش بورڈ‘ کے ساتھ ساتھ اپنے صارفین کے لیے یہ سہولت بھی متعاروف کروانا کا اعلان کیا ہے جس کے ذریعے وہ غیر مناسب مواد پر مبنی ویڈیوز کے حیثیت کا بھی پتہ لا سکتے ہیں۔

ذیل میں ان دس ممالک نے سب سے زیادہ ویڈیوز کے بارے میں شکایت کی اور ان کی نشاندہی کے گئی۔
انڈیا،امریکہ،برازیل.روس.جرمنی،برطانیہ،میکسیکو،ترکی،انڈونیشیا،سعودی عرب

یہ بھی پڑھیں

ملائکہ اروڑا کا سابق شوہر ارباز خان کیساتھ فیملی ڈنر، ویڈیو وائرل

ممبئی: بالی ووڈ اداکارہ و ماڈل ملائکہ اروڑا نے اپنے سابق شوہر ارباز خان اور اُن کی …