سپین : بس حملے کے بعد پولیس نے 4 افراد کو ہلاک کر دیا ، دہشتگرد قرار

بارسلونا (میڈیا پاکستان)سپین کے شہر بارسلونا میں راہگیروں کو کچلنے کے واقعہ کے بعد پولیس نے کیمبرلز میں 4 افراد کو(terrorist kill) ہلاک کر دیا ، ہسپانوی پولیس کا کہنا ہے کہ مارے جانے والے تمام افراد دہشت گرد ہیں۔
سپین کے شہر بارسلونا میں ڈرائیور نے ویگن راہگیروں پر چڑھا دی جس کے نتیجے میں 13 افراد ہلاک اور درجنوں زخمی ہو گئے۔
زخمیوں میں ایک پاکستانی شہری بھی شامل ہے۔ حملے کی ذمہ داری داعش نے قبول کی۔ سپین کے ساحلی علاقے کیمبرلز میں ایک دوسرے دہشت گرد حملے کی کوشش کو ناکام بناتے ہوئے کم از کم چار افراد کو ہلاک کر دیا گیا۔
پولیس کا کہنا ہے کہ مارے جانے والے دہشت گرد تھے تاہم انہوں نے مزید تفصیلات فراہم نہیں کیں۔ ہسپانوی پولیس کے مطابق ہلاک دہشت گرد نئے حملے کی منصوبہ بندی کر رہے تھے ۔ ابتدائی تحقیقاتی رپورٹ کے مطابق دہشت گردوں کا تعلق مراکش سے ہے۔
دوسری جانب بارسلونا حملے کے بعد سپین کے وزیراعظم نے ملک میں تین روزہ سوگ کا اعلان کر دیا ، انہوں نے کہا کہ دہشت گرد ہم متحد لوگوں کو شکست نہیں دے سکتے۔
دہشت گردی کے خاتمے کے لئے مل کر کام کرنے کی ضرورت ہے ، انسداد دہشت گردی سے متعلق قانون سازی کے لئے دیگر سیاسی جماعتوں سے رابطہ کریں گے۔
ہسپانوی حکومت سے اظہار یکجہتی کرتے ہوئے فرانس کے ایفل ٹاور کی لائٹیں بھی بجھا دی گئیں۔

یہ بھی پڑھیں

پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان پہلا ٹیسٹ ڈرا ہوگیا

 کراچی: پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان دو میچوں پر مشتمل سیریز کا پہلا ٹیسٹ میچ …