نیا سروے سامنے آگیا ،ٹرمپ کو 57فیصدلوگ نسل پرست سمجھنے لگے

امریکا(فارن ڈیسک/میڈیا 92نیوز)امریکا میں ایوسی ایٹڈ پریس کےایک حالیہ سروے سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ امریکی صدر نسل پرست انسان ہیں۔

امریکا کی کل آبادی کے نصف حصے سے اس سروے میں رائے لی گئی تھی جن میں سیاہ فام اور ہسپانوی نژاد امریکی بھی شامل تھے۔

سروے میں رائے دینے والے افراد میں سے 57فیصد نے اظہار کیا کہ ٹرمپ کی مسلمانوں کے بارے میں پالیسی اچھی نہیں ہے جبکہ 56فیصد افراد نے اظہار کیا کہ ٹرمپ کی پالیسیاں ہسپانوی نژاد امریکیوں کے لیے اچھے نتائج نہیں دے رہی ہیں۔

سروے میں ایک تہائی افراد نے اظہار کیا کہ افریقی نژاد امریکیوں کے لیے ٹرمپ کی پالیسیاں اچھی نہیں ہیں اور ان کے نسل پرست ہونے کا تاثر زور پکڑتا جارہا ہے۔

سروے میں صرف35فیصد سفید فاموں کو ملک کی سمت درست لگتی ہے جبکہ وائٹ ہاؤس نے سروے کے نتائج پر فوری تبصرے سے گریز کیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں

پاکستان میں انتخابات میں مداخلت پر تشویش ہے تحقیقات کی جائیں، امریکا

واشنگٹن: امریکا نے پاکستان میں ہونے والے عام انتخابات کے انعقاد اور لاکھوں شہریوں کی جانب …