جذبات کو چھپانا صحت کیلئے نقصان دہ

منفی جذبات ، الجھن ، بے زاری اور غصے کا اظہار کرنے سے انسانی دماغ کو سکان مل جاتا ہے اور کچھ دیر بعد انسان وہ بات بھول جاتا ہے
لاہور ( روزنامہ دنیا ) بعض افراد اپنے منفی جذبات جیسے غصہ ، الجھن یا بیزاری کو چھپا کر چہرے پر خوش اخلاقی سجائے پھرتے ہیں ، تاہم ماہرین نے ایسے لوگوں کیلئے وارننگ جاری کر دی ہے ۔ امریکہ کی یونیورسٹی آف کیلیفورنیا میں کی جانیوالی تحقیق کے مطابق منفی جذبات کو دبا کر رکھنا اور ان کا اظہار نہ کرنا دماغی تناؤ میں اضافہ کر سکتا ہے ۔ ان کے مطابق منفی جذبات جیسے الجھن ، غصے یا بیزاری کا اظہار کر دینے سے دماغ پرسکون ہو جاتا ہے اور کچھ عرصے بعد آپ اس بات کو بھول جاتے ہیں ۔
اس کے برعکس اگر آپ ان کا اظہار نہیں کرتے تو وہ ایک بوجھ کی صورت میں آپ کے ذہن پر سوار رہتی ہیں جو آپ کو ذہنی تناؤ یا ڈپریشن میں مبتلا کر سکتی ہیں ۔ ماہرین نے تحقیق میں یہ بھی بتایا کہ وہ افراد جو موڈ ڈس آرڈرز کا شکار ہوتے ہیں وہ اسے غلط سمجھنے کے بجائے اسے تسلیم کریں اور اس کے بارے میں مثبت انداز سے سوچیں تو وہ اس پر قابو پانے میں کامیاب رہتے ہیں ۔ ماہرین کے مطابق موڈ اور احساسات میں آنیوالی مختلف تبدیلیوں کا ابتدا میں ہی مشاہدہ کر کے ان کے تدارک کی کوششیں کی جائیں تو مرض کو شدید ہونے سے بچایا جاسکتا ہے ۔

یہ بھی پڑھیں

ڈینگی وائرس؛ پنجاب میں ایمرجنسی نافذ کرنے کے لیے لاہور ہائیکورٹ میں درخواست دائر

لاہور: ڈینگی کی روک تھام کے لیے پنجاب بھر میں ایمرجنسی نافذ کرنے کے لیے …